168

نئےپاکستان میں طاقتورمجرموں کوبیرون ملک علاج کی سہولت میسرہے، غریب کو نہیں؟؟؟

باغ،(بےلاگ نیوز) مجرمان کو بیرون ملک علاج کی سہولت میسر ہے لیکن کسی ضرورت مند اور غریب مریض کو نہیں،باغ آزاد کشمیر کا نوجوان راجہ سہیل اخلاق خطرناک بیماری میں مبتلا ہےجسکا علاج فقط بیرون ممالک میں ہی ممکن  ہے، برطانوی ہائی کمیشن نے وزارت خارجہ کی درخواست کے باجود مریض کو ویزہ دینے سے انکارکردیا ۔

تفصیلات کیمطابق باغ آزاد کشمیر کا رہائشی 24 سالہ راجہ سہیل 6 سال سے خطرناک بیماری اینکیلوزنگ سپانڈیلائٹس کا شکار ہے، نوجوان کی ریڑھ کی ٹیڑھی ہوتی ہڈی ،شدید درداور جسمانی کمزوری کا باعث بن رہی ہے جس کاعلاج صرف بیرون ملک دستیاب ہے،سہیل نے 2019ءکے اوائل میں سوشل میڈیا پر بیرون ملک علاج کیلئے اپیل کا آغاز کیااور ویڈیو اپ لوڈ کی ۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے 20مئی 2019ءکونوٹس لیا۔

وزارت خارجہ نے 23 مئی کو برطانوی ہائی کمیشن کو خط لکھا ، جس میں برطانوی ہائی کمیشن کو کشمیری نوجوان کے علاج کیلئے ویزا فراہمی کی استدعا کی، برطانوی حکام نے بیمار کشمیری نوجوان کو ویزا فراہمی سے انکار کر دیا۔وزیر خارجہ کے نوٹس اور وزارت خارجہ کے خط کو 8 ماہ سے زیادہ گزر گئے لیکن کسی کے کان پر جوں تک نہیں رینگی ۔وزیرخارجہ کا نوٹس محض میڈیا کی توجہ حاصل کرنے کیلئے سیاسی سٹنٹ نکلااور وزارت خارجہ کا برطانوی ہائی کمیشن کو خط بے نتیجہ  ثابت ہوا۔

کشمیری نوجوان راجہ سہیل کی سوشل میڈیا پر دہائیاں بھی کسی کو سنائی نہ دیں جبکہ ڈاکٹرز کے مطابق مرض روز بروز پیچیدہ ہوتا جارہا ہے۔ کشمیری نوجوان راجہ سہیل کاکہناہےکہ شدید تکلیف میں مبتلا ہوں، علاج نہ ہوا تو معذور ہو جاﺅں گا۔ کشمیری نوجوان نے وزیراعظم،آرمی چیف، وزیر خارجہ سے علاج کیلئے فوری مدد کی اپیل کی اور کہا صحت مند افراد کی طرح جینا چاہتا ہوںحکومت مدد کرے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں