214

عازمین حج کیلئےبری خبر،وزیرمذہبی امور کا صاف انکار

اسلام آباد،(بےلاگ نیوز)وزیر مذہبی امور نے حج کرایوں میں کمی سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جتنا ہو سکتا تھا کرایہ کم کرلیا اب کمی کی گنجائش نہیں۔

مولانا غفور حیدری کی زیر صدارت سینیٹ کی مذہبی امور کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں مولانا غفور حیدری نے مطالبہ کیا کہ حج کرایوں میں اضافہ واپس کیا جائے اور حج اخراجات کو 2019 کی سطح پر لایا جائے،وزیر مذہبی امور نے مولانا غفور حیدری کے مطالبے پر حج کرایوں میں کمی سے انکار کر دیا،کنونیئر حافظ عبد الکریم نے رپورٹ پیش کرتے ہوئے کمیٹی کو بتایا کہ وزارت سے حج اکاؤنٹ سمیت جو معلومات مانگی نہیں دی گئی، جس پر کمیٹی کو معلومات نہ دینے پر راجہ ظفر الحق نے سیکرٹری مذہبی امور کی سرزنش کی۔

حافظ عبد الکریم کا کہنا تھا کہ کمیٹی حاجیوں کی مدد اور سہولت کیلئے بنائی گئی لیکن حکومت نے حج پالیسی کا اعلان کر دیا لیکن کمیٹی کو اعتماد میں نہیں لیا گیا،وزارت مذہبی امور نے کمیٹی کو بتایا کہ رواں سال حج اخراجات 1 ارب 50 کروڑ سے زائد رہا، جس پر ارکان کمیٹی نے حج اخراجات میں اضافے پر اظہار تشویش کیا،چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ رواں سال حج اخراجات میں ڈیڑھ لاکھ اضافہ قبول نہیں کیونکہ غریب آدمی تو حج کرنے کا سوچنے سے بھی گیا۔

سیکرٹری وزارت مذہبی امور نے کمیٹی کو بتایا کہ سعودی ائر لائن نے حج آپریشن کیلئے 950 ڈالر کی بولی دی، جسے مسترد کر دیا گیا۔ رواں سال حج اخراجات میں 1 لاکھ 5 ہزار کا اضافہ ہوا، جبکہ روپے کی قدر میں کمی سے کرایوں کی مد میں 40 ہزار روپے کا اضافہ ہوا،وزیر مذہبی امور نے بتایا کہ سعودی ائیر لائن کہہ رہی ہے پی آئی اے کرایہ کم کرے تو ہم کم کریںگے، ہم نے پی آئی اے کو 50 ڈالر کرایہ کم کرنے کا کہہ دیا ہے۔

ارکان کمیٹی نے سوال اٹھایا کہ عمرے کا کرایہ 55 ہزار روپے ہے تو حج کا 1 لاکھ 40 روپے کیوں؟ ملی بھگت سے کرایوں میں اضافہ کیا گیا،کمیٹی نے کرایوں میں اضافے پر آئندہ اجلاس میں پی آئی اے حکام کو طلب کر لیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں