image 151

فیس بک صارفین کی لوکیشن تحقیقاتی اداروں سے شیئر کی جارہی ہیں

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس نے اعتراف کیا ہے کہ صارفین کی لوکیشن تحقیقاتی اداروں کو فراہم کی جا رہی ہیں جس کا مقصد یہ پتا لگانا ہے کہ لوگ گھروں میں بیٹھ رہے ہیں یا نہیں۔صارفین کی لوکیشنزفیس بک کے ساتھ منسلک 150 سے زائد اداروں کو فراہم کی جا رہی ہیں جو کورونا وائرس کے متعلق تحقیقات کر رہے ہیں۔لوکیشنز  شیئر کرنے کا مقصد اس بات کا پتا چلانا ہے کہ لوگ گھروں میں بیٹھ رہے ہیں یا نہیں۔ اقدامات کا مقصد کورونا وائرس کا پھییلاؤ روکنا ہے جس کے سبب 13 لاکھ سے زائد لوگ متاثر ہوچکے ہیں۔ایپ کے ذریعے ایسے مقامات کی بھی نشاندہی کی جارہی ہے جہاں لوگوں کا میل جول زیادہ ہو اور کورونا پھیل سکتا ہو۔فیس بک کا کہنا ہے اس اقدام سے صارفین کی پرائیویسی متاثر نہیں ہوگی اور ابتدائی طور پر صرف امریکی صارفین کا ڈیٹا شیئر کیا جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں