106

کشمیریوں کو خوراک تک رسائی دی جائیگی،دفترخارجہ

جاں بحق بھی ہوچکے ہیں، لیکن کشمیریوں کو خوراک اور دواؤں تک رسائی نہیں دی جا رہی۔

جمعرات کے روز ہفتہ وار پریس کانفرنس سے خطاب میں ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا تھا کہ پاکستان نے عالمی برادری کو دہائی دی ہے کہ کشمیریوں کے معاملے پر انسانی ہمدردی کے تحت فیصلہ کیا جائے۔ اب تک مقبوضہ کشمیر میں 170 افراد کو کرونا وائرس ہوچکا ہے، جب کہ 5 افراد جاں بحق بھی ہوچکے ہیں۔دفتر خارجہ نے یہ بھی واضح کردیا کہ عالمی توجہ کرونا وائرس پر ہونے کا فائدہ اٹھانے کی کوئی بھارتی کوشش کامیاب نہیں ہونے دی جائے گی۔ ایسے حالات میں بھارتی اقدامات قابل مذمت ہیں۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ اس وقت پوری دنیا میں ہیلتھ کرائسس چل رہا ہے۔ عالمی توجہ ہٹانے کیلئے کابل گوردوارا حملے سے پاکستان کا تعلق جوڑنے کیلئے بھارتی میڈیا اپنی سرکار کی زبان بول رہا ہے، ہم ایسی رپورٹ کی سختی سے مذمت کرتے ہیں۔ بھارت کی پاکستان مخالف سرگرمیوں سے بھی آگاہ ہیں۔مقبوضہ وادی میں آبادی کا تناسب بدلنے کی بھارتی کوششوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے عائشہ فاروقی نے یہ بھی بتا دیا کہ عالمی وبا کے باعث پاکستان میں موجود تمام غیر ملکیوں کے ویزوں میں ایک ماہ کی توسیع کردی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں