192

موٹروےپرموٹرسائیکل چلانےکی اجازت کیخلاف حکومتی استدعامسترد

اسلام آباد،(بےلاگ نیوز)سپریم کورٹ نے موٹروے پر موٹرسائیکل چلانے کی اجازت کیخلاف حکومت کی درخواست مسترد کرتے ہوئےمزید کارروائی کیلئے فریقین سے جواب طلب کرلیا ہے۔

جسٹس مشیرعالم کی سربراہی میں  تین رکنی بنچ نے موٹر وے پر موٹر سائیکل چلانے کی اجازت کا فیصلہ معطل کرنے سے متعلق حکومتی اپیل پر   سماعت کی ،عدالت نے استفسار کیا کہ کیا قانون میں موٹروے پر موٹر سائیکل چلانے پر پابندی ہے ؟ جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی جانب سے بتایا گیا کہ نیشنل ہائی وے سیفٹی آرڈیننس کے مطابق موٹروے پر موٹر سائیکل نہیں چل سکتے۔

جسٹس منصور نے ریمارکس دیئے کہ قانون کے مطابق پابندی کا نوٹیفکیشن وجوہات کے ساتھ جاری کرنا لازمی ہے ، دنیا بھر کی موٹر ویز پر موٹر سائیکل چلتی ہے،اگرحکومت نےپابندی عائد کی ہےتونوٹیفکیشن دکھائے ،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ پابندی کیلئے باضابطہ نوٹیفکیشن جاری تو نہیں ہوا،تاہم موٹر وے کے انٹری پوائنٹ پر پابندی کے سائن بورڈ لگائے گئے ہیں۔

جس پر عدالت کا کہناتھا کہ ہائی وے پر موٹر سائیکل زیادہ خطرناک ہو سکتی ہے ، کیا ہائی ویز پر حکومت کو شہریوں کی سیفٹی کی پرواہ نہیں؟ جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ ہائی ویز پر انٹری پوائنٹ زیادہ ہونے کے باعث پابندی ممکن نہیں ،عدالت نے وفاقی حکومت کی اپیل پر فریقین کو نوٹسز جاری کر تے ہوئے کیس کی سماعت دس دن کیلئے ملتوی کر دی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں