189

امریکہ ایران کشیدگی،شاہ محمود قریشی کا اہم بیان سامنے آگیا

خطے میں آگ بھڑکنے کے امکانات نظر آنے لگے ہیں،شاہ محمود

اسلام آباد( بے لاگ نیوز)سینیٹ اجلاس میں پالیسی بیان دیتے ہوئے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا مشرق وسطیٰ کی صورت حال انتہائی خراب اور تشویشناک ہے، یہ خطہ عرصہ دراز سے کشیدگی اور عدم استحکام کا شکار رہا، خطے کے حل طلب ایشوز پر توجہ نہیں دی گئی جس کی وجہ سے مسائل میں اضافہ ہوا۔

انہوں نے بتایا کہ 27 دسمبر کو عراق میں امریکی قافلے پر حملہ کیا گیا، 29 دسمبر کو ردعمل کے نتیجے میں امریکا نے کارروائی میں ملیشیا کو نشانہ بنایا، بغداد میں امریکا کے سفارت خانے کے سامنے احتجاج، جلاؤ گھیراؤ کیا گیا، امریکا نے ایران کو احتجاج کا ذمہ دار اور قاسم سلیمانی کو ماسٹر مائنڈ قرار دیا۔

ان کا بتانا تھا کہ جنرل سلیمانی کے قتل پر امریکا کی وزارت دفاع کہتی ہے کہ حملہ صدر کی ہدایت پر حملہ کیا، پومپیو کہتے ہیں کہ قاسم سلیمانی امریکا کو مزید نشانہ بنانے کا ارادہ رکھتے تھے، وائٹ ہاؤس نے کہا کہ یہ فیصلہ کن ایکشن تھا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ایران کے ساتھ موجودہ امریکی انتظامیہ نے نیوکلیئر معاہدے سے لاتعلقی ظاہر کی، ٹینشن پہلے ہی جنم لے چکی تھی، اس واقعے نے جلتی پر تیل کا کام کیا، خطے میں آگ بھڑکنے کے امکانات نظر آنے لگے ہیں، اس واقعے کے اثرات اسامہ اور بغدادی سے زیادہ سنگین ہو سکتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ عراق ایران میں احتجاجی کیفیت جنم لیتی ہے، لوگ سڑکوں پر آجاتے ہیں، ایران کی قیادت ہنگامی سیکیورٹی کونسل کا اجلاس بلاتی ہے، قاسم سلیمانی کے جنازے سے آپ شدت کا اندازہ کر سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں