191

اگرامریکا نےجوابی حملہ کیا توبھرپورجنگ شروع ہوجائےگی،ایران کادوٹوک موقف

(ویب ڈیسک)ایران کے صدر حسن روحانی کے ترجمان نے کہاہے کہ امریکا کی جانب سے ایرانی حملے کے جواب میں کارروائی سے خطے میں بھرپور جنگ شروع ہو جائے گی۔

3جنوری کو امریکا نے عراقی دارالحکومت بغداد کے ائیرپورٹ پر راکٹ حملہ کیا جس میں ایران کی القدس فورس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی ساتھیوں سمیت جاں بحق ہو گئے تھے۔ایران نے جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا بدلہ لینے کا اعلان کیا تھا،ایران میں مذہبی اہمیت کے حامل شہر قُم کی مسجد جُمکران میں ایرانی روایات کے مطابق انتقام کی علامت سرخ پرچم بھی لہرا دیا گیا ہے۔

ایران نے عراق میں دو امریکی اڈوں کو راکٹوں سے نشانہ بنایا ہے جس کی تصدیق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی کر دی ہے۔ایران کے سرکاری میڈیا کے مطابق راکٹ حملوں میں 80 افراد ہلاک ہوئے اور امریکی فورسز کے ساز و سامان کو بھی نقصان پہنچا جب کہ امریکی صدر نے سوشل میڈیا جاری بیان میں کہا ہے سب کچھ ٹھیک ہے۔

ایران کے صدر حسن روحانی کے ترجمان حسیم الدین آشنا نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ عراق میں امریکی فورسز پر حملے کے جواب میں اگر امریکا نے حملہ کیا تو خطے میں بھرپور جنگ شروع ہو جائے گی۔ حسیم الدین آشنا نے کہا کہ سعودی عرب والے مختلف راستے کا انتخاب کر سکتے ہیں جو امن کا راستہ ہو سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں