130

اربوں روپے لٹ گئےاورآپکوپرواہ ہی نہیں،سپریم کورٹ

اسلام آباد،(بےلاگ نیوز)غیرقانونی ٹیکس ری فنڈ کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی،ایف بی آرکی قائمقام چئیرپرسن نوشین جاوید امجد عدالت میں پیش ہوئیں،دوران سماعت عدالت کے استفسارپربتایا کہ وزیراعظم آفس سے منظوری کے بعد ٹیکس ری فنڈ میں بے ضابطگیوں کی انکوائری شروع ہوچکی ہے چیئرمین ایف بی آرشبر زیدی بیماری کے باعث چھٹی پر ہیں.

چیف جسٹس گلزاراحمد نے قائمقام چیئرپرسن کی سخت سرزنش کی اورریمارکس دئیے کہ بی بی ہم یہاں کہانیاں سننے نہیں بیٹھے،،،تین ماہ کی عدالتی مہلت میں تحقیقات مکمل کیوں نہیں ہوئیں؟اربوں روپے لُٹ گئے ہیں، سرکار کا نقصان ہوا،آپکو پرواہ ہی نہیں،پھرعہدہ چھوڑ دیں،،،ایف بی آردیگر کاموں میں مصروف ہے،عدالتی احکامات پر توجہ نہیں.

چیف جسٹس نے چیئرپرسن کو مخاطب کرتےہوئےریمارکس دئیے اگر رقم آپکی جیب سے گئی ہوتی تو آپ ایک منٹ بھی گھر نہ بیٹھتی،،،قوم کے پیسے سے کسی کو ہمدردی نہیں،،،،اب ایسا نہیں ہوگا،،،چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کیوں اور کتنے بیمار ہیں سب معلوم ہے۔

عدالت نے ایف بی آر کو 15 دن میں غیرقانونی ٹیکس ری فنڈ کی تحقیقات مکمل کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں