146

کشمیرکوآزاد کروکی آوازیں نئی دہلی تک پہنچ گئیں

 (ویب ڈیسک) مقبوضہ جموں وکشمیرمیں بھارتی پولیس نے چار افراد کو گھر گھر تلاشی کے دوران گرفتار کر لیا۔ وادی میں جاری مظالم اور مسلسل لاک ڈاؤن پر رکن امریکی ایوان نمائندگان الہان عمر بھی برس پڑیں جبکہ کشمیر کو آزاد کرو کی آوازیں نئی دہلی تک پہنچ گئیں، نئی دلی میں طلبہ نے بھی ’’کشمیر کو آزاد‘‘ کرو کے پوسٹر لہرا دیئے۔

مقبوضہ وادی میں عوام 157 دنوں سے گھروں میں محصور ہیں، خوراک اور ادویات کا بحران سنگین ہو گیا ہے بربریت کے باوجود قابض فورسز کے مظالم میں کمی نہ آسکی،بھارتی پولیس نے ضلع کشتوار میں گھر گھر تلاشی کے دوران ولیج ڈیفنس کمیٹی کے ممبر سمیت چار افراد کو گرفتار کر لیا، پولیس نے الزام لگایا کہ کمیٹی ممبر دیوی داس مجاہدین کو اسلحہ سپلائی کرنے میں ملوث ہیں۔

مقبوضہ کشمیرکی صورتحال پر رکن امریکی کانگریس الہان عمر نے ٹویٹ کیا کہ کشمیرمیں جاری بلیک آؤٹ جمہوریت کی تاریخ کا سب سے طویل انٹرنیٹ شٹ ڈاؤن ہے۔ انہوں نے نریندرمودی کےاقدامات کو خوفناک رحجان قراردیتے ہوئے بھارتی شہریوں سے مودی کے مسلم مخالف اقدامات کے خلاف احتجاج کی اپیل کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں